نصابی کتابوں سے اسلام،پاکستان کی تاریخ سے متعلق اسباق خارج کرنے پر تشویش ہے

نصابی کتابوں سے اسلام،پاکستان کی تاریخ سے متعلق اسباق خارج کرنے پر تشویش ہے

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمدنے پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کی جانب سے پرائمری کی نئی نصابی کتابوں سے اسلام،پاکستان کی تاریخ اور فوج سے متعلق اسباق اور تصاویر خارج کرنے کے اقدام پر اپنی شدیدتشویش کا اظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ میڈیا رپورٹس کے مطابق اول سے پنجم تک کی کتابوں سے رحمت عالمؐ،حضرت علیؓ،شاہ عبد القادر جیلانیؒ ،جشن عید ملادالنبیؐ کے موضوعات نکال کر ہیلن کیلرکے مضامین کو شامل کیا گیا ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔نصاب سے ام المومنین حضرت خدیجتہ الکبریٰؓ اور مسجد کی تعظیم کے حوالے سے مضامین کو سرے سے ہی خارج کردیا گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ کتب سے پاکستان کانقشہ،قائد اعظم کا سبق،یوم آزادی اور مساجد سے متعلق مضامین،میجر عزیز بھٹی شہید،فوج کی پریڈ،آپریشن ضرب عضب،ردالفساد کے حوالے سے آگاہی مضامین اور تصاویر کو بھی ایک سازش کے تحت نکال دیا گیاہے۔انہوں نے کہاکہ ضرورت اس امر کی ہے کہ چھوٹے بچوں کے نصاب تعلیم میں امریکی ہیروز کاتذکرہ تشویش ناک امر ہے۔ایک منظم منصوبہ بندی کے تحت معصوم بچوں کی ذہن سازی کرکے انہیں دین اسلام سے دور اور وطن کے حقیقی جانثاروں کے کارناموں کو پوشیدہ رکھ کر غلط تربیت کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔جماعت اسلامی مستقبل کے معماروں کی کمزور بنیادوں پر نشوونما،ذہن سازی اور کردار سازی کے خلاف ہونے والی سازشوں کوکامیاب نہیں ہونے دے گی۔میاں مقصود احمد نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہاہے کہ پنجاب ٹیکسٹ بورڈ کے اس ناقابل معافی کارنامے پر سخت ایکشن لے۔محض سطحی لیول کی محکمہ کارروائی نہیں ہونی چاہئے،اس مذموم سازش کے پیچھے چھپے عناصر کوجلد بے نقاب کرکے کیفر کردار تک پہنچایاجائے۔پاکستان اسلامی جمہوری ریاست ہے جو قومی نظریے اور کلمہ طیبہ کے نام پر وجودمیں آئی۔مختلف حیلوں بہانوں سے دشمن ہماری نسل کو نشانہ بناکراپنے گھناؤنے عزائم کی تکمیل چاہتاہے۔اس کا راستہ روکنے کے لیے اتحادویکجہتی کامظاہرہ کرتے ہوئے ملک وقوم کے مستقبل کو محفوظ بنانے کی ضرورت ہے۔نصاب کی تبدیلی کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1