سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کو ہٹانے کا معاملہ کشیدگی اختیار کر گیا، وفاق اور وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کے درمیان ٹھن گئی 

سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کو ہٹانے کا معاملہ کشیدگی اختیار کر گیا، ...
سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر کو ہٹانے کا معاملہ کشیدگی اختیار کر گیا، وفاق اور وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کے درمیان ٹھن گئی 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن ) وفاقی وزراءکے خلاف مقدمہ درج کرنے کے معاملے پر وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی، آئی جی پنجاب اور سی سی پی او کے درمیان کشیدگی کا معاملہ تاحال برقرار ہے۔

نجی ٹی وی جیونیوز کے مطابق وفاق کے نوٹیفکیشن کے باوجود سی سی پی او غلام محمود ڈوگر نے عہدے کا چارج چھوڑنے سے انکار کر دیا ہے۔سی سی پی او غلام محمود ڈوگر کا کہنا تھا میں چارج نہیں چھوڑ رہا، جب تک پنجاب حکومت نہیں کہے گی چارج نہیں چھوڑوں گا۔

ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے سی سی پی او لاہور کو مریم اورنگزیب اور جاوید لطیف پر مقدمہ درج کرنے پر ہٹایا گیا تھا جبکہ آئی جی پنجاب فیصل شاہکار نے ن لیگی رہنماو¿ں پر مقدمہ درج کرنے سے منع کرتے ہوئے لیگل رائے لینے کا حکم دیا تھا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ سی سی پی او نے 7 روز میں چارج نہ چھوڑا تو وفاق انہیں معطل کر سکتا ہے۔دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کی زیر صدارت ویڈیو لنک کانفرنس آج دوپہر ہو رہی ہے جس میں آج صبح آئی جی پنجاب فیصل شاہکار کو بھی پیغام بھیج کر شرکت کی دعوت دی گئی۔

دوسری جانب نجی ٹی وی ایکسپریس نیوز کے مطابق سی سی پی او لاہور نے وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے چارج نہیں چھوڑا ہے ،وزیراعلیٰ پنجاب نے انہیں کام جاری رکھنے کی ہدایت کر دی ہے ، وزیراعلیٰ سے پوچھا نہیں گیا آپ عہدے پر برقرار رہیں ۔سی سی پی او اگر اسٹبلشمنٹ ڈویژن کی ہدایت پر عمل نہیں کریں گے تووفاق کی جانب سے شوکاز کیا جا سکتاہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -