ابھی تو میں جوان ہوں​ | حفیظ جالندھری |

ابھی تو میں جوان ہوں​ | حفیظ جالندھری |
ابھی تو میں جوان ہوں​ | حفیظ جالندھری |

  

ابھی تو میں جوان ہوں​

ہوا بھی خوش گوار ہے 

گلوں پہ بھی نکھار ہے​

ترنّمِ ہزار ہے

بہارِ پُر بہار ہے​

کہاں چلا ہے ساقیا 

اِدھر تو لوٹ، اِدھر تو آ​

یہ مجھ کو دیکھتا ہے کیا

اٹھا سبو، سبُو اٹھا​

سبو اٹھا، پیالہ بھر

پیالہ بھر کے دے اِدھر​

چمن کی سمت کر نظر

سماں تو دیکھ بے خبر​

وہ کالی کالی بدلیاں

افق پہ ہو گئیں عیاں​

وہ اک ہجومِ مے کشاں

ہے سوئے مے کدہ رواں​

یہ کیا گماں ہے بد گماں 

سمجھ نہ مجھ کو ناتواں​

خیالِ زہد ابھی کہاں

ابھی تو میں جوان ہوں​

عبادتوں کا ذکر ہے

نجات کی بھی فکر ہے​

جنون ہے ثواب کا 

خیال ہے عذاب کا​

مگر سنو تو شیخ جی

عجیب شے ہیں آپ بھی​

بھلا شباب و عاشقی 

الگ ہوئے بھی ہیں کبھی​

حسین جلوہ ریز ہوں

ادائیں فتنہ خیز ہوں​

ہوائیں عطر بیز ہوں

تو شوق کیوں نہ تیز ہوں​

نگار ہائے فتنہ گر

کوئی اِدھر کوئی اُدھر​

ابھارتے ہوں عیش پر

تو کیا کرے کوئی بشر​

چلو جی قصّہ مختصر

تمھارا نقطۂ نظر​

درست ہے تو ہو مگر

ابھی تو میں جوان ہوں​

نہ غم کشود و بست کا

بلند کا نہ پست کا​

نہ بود کا نہ ہست کا

نہ وعدۂ الست کا​

امید اور یاس گم 

حواس گم، قیاس گم​

نظر کے آس پاس گم

ہمہ بجز گلاس گم​

نہ مے میں کچھ کمی رہے

قدح سے ہمدمی رہے​

نشست یہ جمی رہے

یہی ہما ہمی رہے​

وہ راگ چھیڑ مطربا

طرَب فزا، الَم رُبا​

اثر صدائے ساز کا

جگر میں آگ دے لگا​

ہر ایک لب پہ ہو صدا 

نہ ہاتھ روک ساقیا​

پلائے جا پلائے جا

ابھی تو میں جوان ہوں​

یہ گشت کوہسار کی

یہ سیر جوئبار کی​

یہ بلبلوں کے چہچہے

یہ گل رخوں کے قہقہے​

کسی سے میل ہو گیا

تو رنج و فکر کھو گیا​

کبھی جو بخت سو گیا 

یہ ہنس گیا وہ رو گیا​

یہ عشق کی کہانیاں

یہ رس بھری جوانیاں​

اِدھر سے مہربانیاں

اُدھر سے لن ترانیاں​

یہ آسمان یہ زمیں 

نظارہ ہائے دل نشیں​

انھیں حیات آفریں

بھلا میں چھوڑ دوں یہیں​

ہے موت اس قدر قریں 

مجھے نہ آئے گا یقیں​

نہیں نہیں ابھی نہیں 

ابھی تو میں جوان ہوں​

شاعر: حفیظ جالندھری

(شعری مجموعہ:نغمہ زار؛ سالِ اشاعت1957)

Abhi   To   Main   Jawaan   Hun

​Hawa    Bhi   Khushgawaar   Hay

Gulon    Pe   Bhi    Nikhaar   Hay

Tarannam-e-Khumaar   Hay

Bahaar    Pur    Bahaar   Hay

Kahan    Chalaa    Hay   Saaqiya

Idhar   To    Laot    Idhar    To   Aa

Aray    Yeh    Dekhta    Hay   Kaya

Utha    Suboo    ,   Suboo    Utha

Suboo    Utha   ،   Payala   Bhar

Payala    Bhar    K    Day   Idhar

Chaman    Ki    Samt    Kar     Nazar

Samaan   To    Dekh    Bekhabar

Wo    Kaali    Kaali    Badliyaan

Ufaq    Pe    Ho    Gaen   Jaawaan

Wo   Ik    Huijoom-e-May    Kashaan

Hay    Soo-e-Maykada    Rawaan

Yeh   Kaya    Gumaan   Hay   Badgumaan

Samajh   Na    Mujh   Ko   Natawaan

Khayaal-e-Zuhd    Abhi   Kahan

Abhi   To   Main   Jawaan   Hun

Ibaadton    Ka    Zikr   Hay

Nijaat   Ki    Bhi    Fikr   Hay

Junoon Hay Sawaab Ka

Khayaal   Hay    Azaab   Ka

Magar    Suno    To    Shaikh   Ji

Ajeeb   Shay    Hen    Aap   Bhi

Bhala   Shabaab -o- Aashqi

Alag    Huay    Bhi    Hen    Kahan

Haseen    Jalwa    Raiz    Hon

Adaaen    Fitna    Khaiz   Hon

Hawaaen    Atr    Baiz    Hon

To    Shaoq    Kiun    Na     Taiz   Ho

Nigaar    Haaey    Fitna    Gar

Koi    Idhar    Koi   Udhar

Ubhaartay    Hon    Aish   Par

To    Kaya   Karay   Koi   Bashar

Chalo    Ji    Qissa-e- Mukhtasar

Tumhaaar    Nuqta-e-Nazar

Darust    Hay   To     Ho    Magar

Abhi   To   Main   Jawaan   Hun

Yeh   Gasht   Kohsaar   Ki 

Yeh   Saair   Janbaar   Ki

Yeh   Bulbalon   K   Chehchahay

Yeh   Gul   Rukhon   K   Qehqahay

Kiai   Say   Mail   Ho   Gaya

To   Ranj-o-Fikr   Kho   Gaya

Kabhi   Jo   Bakht   So   Gaya

Yeh   Hans   Gay   Wo    Ro   Gaya

Yeh   Eshq   Ki    Kahaniyaan

Yeh    Rass    Bahri    Jawaniyaan

Udhar   Say   Mehrbaniyaan

Udhar    Say    Lan  Taraniyaan

Yeh    Aasmaan    Yeh    Zameen

Nazaara    Haa-e- Dilnasheen

Inhen    Hayaat    Aafreen

Bhala    Main    Chorr    Dun   Yahen

Hay    Maot    Iss    Qadar   Qareen

Mujhay    Na      Aaey    Ga   Yaqeen

Nahen    Nahen   ,   Abhi   Nahen

Abhi     To     Main     Jawaan     Hun

Na   Gham   Kashood-o-Bast   Ka

Buland    Ka    Na    Past   Ka

Na    Bood    Ka    Na    Hast   Ka

Na    Waada-e-Alast     Ka

Umeed    Aor     Yaas   Gum

Hawaas    Gum  ,    Qayaas   Gum

Nazar    Say   Aas     Paas   Gum

Hama    Ba    Juzz    Gilaas   Gum

Na   May    Men    Kuch    Kami   Rahay

Qadah   Say    Hamdami   Rahay

Nashist    Yeh    Jami   Rahay

Yahi    Hama    Hami   Rahay

Wo    Raag    Chairr   Matrabaa

Tarab    Fiza    Alam   Fiza

Asatr    Sadaa-e-Saaz    Ka

Jigar    Men    Aag    Day   Laga

Har   Aik   Lab   Pe    Ho   Sadaa

Na   Haath     Rok    Saaqiya

Pilaaey    Ja    Pilaaey    Ja

Abhi   To   Main   Jawaan   Hun

Poet: Hafeez    Jalandhari

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -