مقبوضہ کشمیر میں انتخابی ڈرامہ کامیاب بنانے کیلئے 100 نوجوانوں کو گرفتار کرنے کا انکشاف

مقبوضہ کشمیر میں انتخابی ڈرامہ کامیاب بنانے کیلئے 100 نوجوانوں کو گرفتار کرنے ...
مقبوضہ کشمیر میں انتخابی ڈرامہ کامیاب بنانے کیلئے 100 نوجوانوں کو گرفتار کرنے کا انکشاف

  

سری نگر (ویب ڈیسک) مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی ایک مقامی تنظیم وائس آف وکٹمز نے کہا ہے کہ بھارتی پولیس نے انتخابی ڈرامے کو یقینی بنانے کیلئے نابالغ بچوں سمیت 1100 افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔ کشمیری میڈیا سروس کے مطابق سرینگر سے جاری ایک بیان میں وائس آف وکٹمز نے کہا کہ انتخابی ڈرامے کے دوران بہت سے علاقوں میں لوگوں نے بائیکاٹ کے حق میں مظاہرے کئے جس کے بعد بھارتی پولیس نے لوگوں کو گرفتار کرنا شروع کیا۔

بھارتی پولیس نے سرینگر، بارہمولہ، سوپور، پلہالن، بڈگام اور جنوبی کشمیر کے مختلف علاقوں سے نوجوانوں کو گرفتار کرلیا تھا۔ وائس آف وکٹمز کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر عبدالقدیر ڈار نے کہا کہ گرفتار افراد بھی بھی بھارتی پولیس کی حراست میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان میں سے اکثر نوجوانوں کو سرینگر شہر اور بارہمولہ قصبے کے اندرونی علاقوں سے گرفتار کیا گیا ہے جبکہ پلہالن سمیت وادی کشمیر کے مختلف علاقوں سے بھی بڑی تعداد میں لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ بھارتی پولیس نے نوجوانوں کی گرفتاری سے متعلق اعداد شمار پیش کرتے ہوئے صرف 600 افراد کو گرفتار کرنے کی تصدیق کی ہے تاہم گرفتار افراد کی تعداد 1100 سے بھی زیادہ ہے۔ ان گرفتاریوں کے باوجود عوامی سطح پر انتخابی ڈرامے کے خلاف احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ دوسری طرف مقبوضہ کشمیر میں ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن نے ضلع بارہمولہ کے پولیس سٹیشن میں 27 نوجوانوں کی ایک سال سے مسلسل نظر بندی کے خلاف عدالت عالیہ سے درخواست کی ہے کہ وہ چیف جوڈیشل مجسٹریٹ سے نظر بند نوجوانوں کی حالت زار کے بارے میں رپورٹ طلب کرے۔

مزید : بین الاقوامی