شہزاد اکبر کی جانب سے مقدمہ درج کروانے پر پی ٹی آئی رہنما نذیر چوہان نے موقف جاری کر دیا ، سنگین ترین الزام لگا دیا 

شہزاد اکبر کی جانب سے مقدمہ درج کروانے پر پی ٹی آئی رہنما نذیر چوہان نے موقف ...
شہزاد اکبر کی جانب سے مقدمہ درج کروانے پر پی ٹی آئی رہنما نذیر چوہان نے موقف جاری کر دیا ، سنگین ترین الزام لگا دیا 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم عمران خان کے مشیر شہزاد اکبرکی جانب سے مقدمہ درج کروائے جانے پر پی ٹی آئی رکن اسمبلی نذیر چوہان بھی میدان میں آ گئے ہیں اور انہوں نے شہزاد اکبر پر سنگین ترین الزامات عائد کرتے ہوئے مطالبہ کر دیاہے ۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور جہانگیر ترین گروپ کے رکن نذیر چوہان نے شہزاد اکبر کی جانب سے درج کروائے گئے مقدمے پر موقف جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ آج صبح اٹھا تو پتا چلا شہزاد اکبر نے کل کسی نجی ٹی وی پر منصوبہ بندی کے تحت میرے خلاف پروگرا م چلایا ، جس میں انہوں نے کہا کہ میرا تعلق سنی گھرانے سے ہے ، میری کردار کشی کی ہے ، مجھے اور میرے بچوں کو تھریٹ ہے ۔ نذیر چوہان کا کہناتھا کہ میرا نقطہ یہ ہے کہ شہزاد اکبر کہیں کہ ” میں گواہی دیتاہوں کہ محمد اللہ کے رسول ﷺ اور آخری نبی ہیں “ ، انہوں نے یہ کہا نہیں اور الٹا میرے خلاف مقدمہ درج کروا دیا ۔

نذیر چوہان کا کہناتھا کہ میں داتا دربار پہنچ گیا ہوں اور اگر گرفتار کرنا ہے تو یہاں پر آ کر کر لیں ، مجھے ڈھونڈنے کی ضرورت نہیں ہے ، آپ مجھے یہاں پونے دو بجے گرفتار کر سکتے ہیں ، میں اپنے پاکستان کے آئین اور قانون کا پابند ہوں ، میں یہاں میڈیا سے بات بھی کروں گا اور اپنا اگلا لائحہ عمل بتاﺅں گا ۔

ان کا کہناتھا کہ میں نے اپنے جہانگیر ترین کے گروپ کے ممبران کو آگاہ کر دیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نہیں چاہئیں گے کہ قادیانی ہم پر مسلط ہوں ، مجھے اس چیز کا خدشہ تھا اور میرے ذرائع نے مجھے بتایا تھا کہ شہزاد اکبر بھی شائد اس مسلک سے تعلق رکھتے ہیں ، یہی وجہ تھی کہ جس پر میں نے ان سے کہا کہ اگر ایسا نہیں ہے تو آپ اسے کلیئر کر دیں ، ایک سکینڈل کیلئے ٹویٹ کر دیں کہ میں مانتا ہوں کہ نبی ﷺ اللہ کے آخری رسول ہیں ، اگر آپ یہ کہہ دیں تو میں آپ سے معذرت بھی کروں گا ، لیکن شہزاد اکبر وضاحت کرنے کی بجائے ایف آئی آر درج کروانے کیلئے چلے گئے ۔

مزید :

قومی -