نیب نے نوازشریف کے بعد ایک اور سابق وزیراعظم کے گرد گھیرا تنگ کرلیا، اہم قدم اٹھا لیا

نیب نے نوازشریف کے بعد ایک اور سابق وزیراعظم کے گرد گھیرا تنگ کرلیا، اہم قدم ...
نیب نے نوازشریف کے بعد ایک اور سابق وزیراعظم کے گرد گھیرا تنگ کرلیا، اہم قدم اٹھا لیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(ویب ڈیسک) قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیراعظم شوکت عزیز اور سابق وزیر برائے پانی و بجلی لیاقت جتوئی کے خلاف ریفرنس دائر کردیا۔

جن افراد کے خلاف ریفرنس دائر کیا گیا ان میں شوکت عزیز، لیاقت جتوئی، سابق وفاقی سیکریٹری اسمٰعیل قریشی، سابق ایڈیشنل سیکریٹری یوسف میمن، سابق جوائنٹ سیکریٹری غلام نبی منگریو، محکمہ پانی و توانائی کے سینیئر افسرعمر فاروق، آلٹرنیٹو انرجی ڈیولپمنٹ بورڈ(اے ای ڈی بی) کے سابق چیئرمین ایئر مارشل(ر) شاہد حامد، اے ای ڈی بی کے سابق سیکریٹری بریگیڈیئر نسیم اے خان، اور سابق ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر بشارت حسن بشیر شامل ہیں۔نیب ترجمان کے مطابق مذکورہ ریفرنس اسلام آباد کی احتساب عدالت میں دائر کیا گیا۔

خیال رہے کہ نیب بورڈ کی جانب سے سابق وزیر اعظم کے خلاف ریفرنس اے ای ڈی بی کے کنسلٹنٹ کے طور پر بشارت حسن بشیر کی ایم پی -2 اسکیل پر غیر قانونی تعیناتی پر دائر کیا گیا جس سے قومی خزانے کو 2 کروڑ 10 لاکھ روپے کا نقصان پہنچا۔نیب ذرائع کے مطابق شوکت عزیز کے خلاف درخواست کی جانچ پڑتال، تحقیقات اور تفتیش کا عمل مکمل ہوچکا ہے جس میں سابق وزیراعظم کو قصوروار پایا گیا۔

اس ضمن میں مزید تفصیلات کے مطابق ریفرنس میں نامزد ملزمان نے ملی بھگت کر کے ڈاکٹر بشارت حسن بشیر کو غیر قانونی طور پر ایم پی اسکیل-2 کو بطور کنسلٹنٹ تعینات کیا۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد