افغانستان میں مستقل امن کیلئے کیا کام کرنا ہو گا؟اسفندیارولی نے دہائیوں سے جاری کشیدگی ختم کرنے کا فارمولہ دے دیا 

 افغانستان میں مستقل امن کیلئے کیا کام کرنا ہو گا؟اسفندیارولی نے دہائیوں سے ...
 افغانستان میں مستقل امن کیلئے کیا کام کرنا ہو گا؟اسفندیارولی نے دہائیوں سے جاری کشیدگی ختم کرنے کا فارمولہ دے دیا 

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ افغانستان میں مستقل امن کیلئے ہر فریق کو پر خلوص کردار ادا کرنا ہوگا، چین،روس اور امریکا ضامن جبکہ پاکستان پہلے سے جو سہولت کاری کا کردارمزید تیز اور مضبوط کرے تو اس پورے خطے میں امن کا قیام  یقینی بنایا جاسکتا ہے۔

 ولی باغ چارسدہ میں سبکدوش ہونیوالے افغان سفیر عاطف مشعل سے گفتگو کرتے ہوئےاسفند یار ولی نے کہا کہ افغانستان میں دہائیوں سے جاری کشیدگی ختم کرنے کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کوکردار ادا کرنا ہوگا،لویہ جرگہ کی کامیابی افغان امن عمل کیلئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے،پاکستان اور افغانستان کے درمیان بہتر تعلقات خطے کی ترقی اور پائیدار امن کیلئے ضروری ہے۔ اے این پی سربراہ کا کہنا تھا کہ امریکہ افغان امن معاہدے کے بعد بین الافغانی مذاکرات میں رکاوٹیں ختم کرنی ہوں گی،افغانستان کے مستقبل کا فیصلہ افغان عوام نے کرنا ہے اور انکی منتخب قیادت ہی انکے نمائندے ہیں،تمام سٹیک ہولڈرز طالبان اور افغان قیادت کے درمیان مذاکرات کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔انہوں نے کہا کہ چالیس سالہ جنگ کے خاتمے کیلئے تمام فریقین کو ایک میز پر لانا ہوگا، چین،روس اور امریکا ضامن جبکہ پاکستان پہلے سے جو سہولت کار کا کردار ادا کررہا ہے وہ مزید تیز اور مضبوط کرے تو اس پورے خطے میں امن کا قیام  یقینی بنایا جاسکتا ہے۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -