سایۂ قصرِ یار میں بیٹھا| منیر نیازی|

سایۂ قصرِ یار میں بیٹھا| منیر نیازی|
سایۂ قصرِ یار میں بیٹھا| منیر نیازی|

  

سایۂ قصرِ یار میں بیٹھا

میں تھا اپنے خمار میں بیٹھا

اُس کا آنا تھا خواب میں آنا

میں عبث انتظار میں بیٹھا

کوئی صورت نہیں ہے اس جیسی

اُس کو دیکھو ہزار میں بیٹھا

اُس کو خوشیوں سے خوف آتا ہے

وہم کیا ذہنِ یار میں بیٹھا

ہم بھی رستوں میں پھر رہے تھے منیر

وہ بھی تھا رہگزار میں بیٹھا

شاعر: منیر نیازی

(شعری مجموعہ: چھے رنگین دروازے)

Saaya-e-Qisr-e-Yaar   Men   Baitha

Main   Tha   Apnay   Khumaar   Men   Baitha

 Uss   Ka   Aana  Taha    Khaab   Men   Aana

Main   Abass   Intezaar   Men   Baitha

 Koi   Soorat    Nahen   Hay   Uss   Jaisi

Uss   Ko   Dekho  Hazaar   Men   Baitha

 Uss   Ko   Khushiyon   Say   Khaof   Aata   Hay

Wehm   Kaya   Zeh-e-Yaar   Men   Baitha

 Ham   Bhi   Raston   Men   Phir   Rahay   Thay   MUNEER

Wo   Bhi   Tha    Rehguzaar   Men   Baitha

 Poet: Muneer   Niyazi

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -