ساﺅتھمپٹن ٹیسٹ میں کھیل میں تاخیر پر انگلیاں اٹھنے لگیں، انگلینڈ ٹیم کے سابق کپتان ناصر حسین پھٹ پڑے

ساﺅتھمپٹن ٹیسٹ میں کھیل میں تاخیر پر انگلیاں اٹھنے لگیں، انگلینڈ ٹیم کے ...
ساﺅتھمپٹن ٹیسٹ میں کھیل میں تاخیر پر انگلیاں اٹھنے لگیں، انگلینڈ ٹیم کے سابق کپتان ناصر حسین پھٹ پڑے

  

ساﺅتھمپٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان جاری دوسرے ٹیسٹ میچ کے دوران کھیل میں تاخیرپر انگلیاں اٹھنے لگیں، بارش اور کم روشنی کی آڑ میں ’ٹائم پاس‘ کیا جانے لگا، سابق کپتان ناصر حسین نے کہاکہ کھلاڑیوں کا بغیر کسی وجہ کے باہر بیٹھے رہنا توہین آمیز ہے، گراﺅنڈ میں صرف 2 افراد کام کرتے ہوئے نظر آئے۔ 

تفصیلات کے مطابق انگلینڈ اور پاکستان کے درمیان ساﺅتھمپٹن ٹیسٹ بارش اور کم روشنی کی وجہ سے شدید متاثر ہوا، ابتدائی 3 روز کے دوران تو صرف 86 اوورز کا کھیل ہوسکا، تیسرے دن تو پلیئرز میدان میں اترنے کا انتظار ہی کرتے رہ گئے جبکہ چوتھے دن بھی بارش کی مداخلت کا سلسلہ جاری رہا، کھیل کے درمیان بار بار تعطل اور دوبارہ شروع کئے جانے میں تاخیر کی وجہ سے انگلیاں اٹھنا شروع ہوگئی ہیں۔

انگلینڈ کے سابق کپتان ناصرحسین کافی برہم دکھائی دئیے جن کا کہنا ہے کہ دوسرے دن کے کھیل کے دوران میری حمایت امپائرز کے ساتھ تھی جنہوں نے صرف قوانین کی پیروی کی لیکن تیسرے دن کھیل کو شروع کرنے کی کوئی کوشش ہی نہیں ہوئی، میں نے دیکھا کہ گراﺅنڈ میں صرف 2 افراد کام کررہے تھے، آپ تصور کریں کہ یہ میچ سری لنکا میں ہورہا ہوتا تو کتنے لوگ کورز ہٹانے کیلئے موجود ہوتے، بارش سے اس مقابلے کو اس قدر متاثر ہوتے دیکھنا مایوس کن جبکہ کھلاڑیوں کا باہر بیٹھے رہنا توہین آمیز ہے۔

انہوں نے کہا کہ بائیوسیکیور ببل میں لوگ کئی کئی دنوں تک ہوٹل اور گراﺅنڈز تک محدود اور ان کا مقصد صرف کرکٹ ہے، ایسے میں کھیل کو تاخیر کا شکار نہیں کرنا چاہیے۔ دوسری جانب بین سٹوکس کی عدم موجودگی کی وجہ سے دوسرے ٹیسٹ کیلئے انگلش الیون میں جگہ پانے والے بیٹسمین زیک کرالی نے کہاکہ مجھے بھی کھیل کو اس طرح روکے جانے یا تاخیر کا شکار کرنے پر فرسٹریشن ہوئی، پہلے میں بھی شکوہ کیا کرتا تھا مگر اب سمجھتا ہوں کہ یہ قوانین ہمارے لئے بہتر ہیں۔ 

انہوں نے کہا کہ جمعہ کو ڈیپ سکوائر پر فیلڈنگ کے دوران 2 مرتبہ مجھے بالکل بھی گیند دکھائی نہیں دی۔ ایسے میں یہ میرے یا کسی فیلڈر کے سر پر یا بیٹسمین کے بازو وغیرہ پر لگ سکتی تھی جو اسے اس سیریز سے باہر کردیتی یا پھر یہ چوٹ اس کی زندگی بدل کر رکھ سکتی ہے، اس لئے میں اس معاملے میں امپائرز کے ساتھ ہوں۔

مزید :

کھیل -