جو داستانِ وفا ناکام لے گئے| کلیم عاجز|

جو داستانِ وفا ناکام لے گئے| کلیم عاجز|
جو داستانِ وفا ناکام لے گئے| کلیم عاجز|

  

جو داستانِ وفا ناکام لے گئے

وہ سر فروش حیاتِ دوام لے کے گئے

بچا کے لے گئے تکلیفِ خار سے دامن

جو دور ہی سے گلوں کا سلام لے کے گئے

جو میکدہ سے بظاہر چلے گئے محروم

وہی تو کیفِ مئے لالہ فام لے کے گئے

جہاں میں قدرشناسِ وفا کوئی نہ ملا

ہم اپنا دردِ محبت تمام لے کے گئے

شاعر: کلیم عاجز

 ( شعری مجموعہ:جب فصلِ بہاراں آئی تھی؛سالِ اشاعت،1990)

Jo   Daastaan-e-Wafaa   Nakaam   Lay   K   Gaey

Wo   Sarfarosh   Hayaat-e-Dawaam   Lay   K   Gaey

 Bachaa   K   Lay   Gaey   Takleef-e-Khaar   Say   Daaman

Jo   Door   Hi   Say   Gulon   Ka  Salaam   Lay   K   Gaey

 Jo   Maukadaa   Say   Bazaahir   Chalay   Gaey   Mehroom

Wahi   To   Kaif-e-May-e-Laala    Faam   Lay   K   Gaey

 Jahan   Men   Qadr    Shanaas -e-Wafaa    Koi    Na    Mila

Ham   Aapna   Dard-e-Muahbbat   Tamaam   Lay   K   Gaey

 Poet: Kaleem   Aajiz

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -