"میری جان کو خطرہ ہے اور یہ لوگ مجھے مسلسل ہراساں کررہے ہیں لہٰذا۔۔۔" سنتھیا ڈی رچی نے ایک مرتبہ پھر عدالت کا دروازہ کھٹکھٹا دیا

"میری جان کو خطرہ ہے اور یہ لوگ مجھے مسلسل ہراساں کررہے ہیں لہٰذا۔۔۔" سنتھیا ...

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) امریکی خاتون سینتھیا ڈی رچی نے سابق وزیر داخلہ رحمن ملک کے خلاف مقدمہ کے اندراج کے لیے اسلام آباد کی مقامی عدالت سے رجوع کرلیا جس پر ایڈیشنل سیشن جج نے تھانہ سیکریٹریٹ پولیس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 27 جون تک جواب طلب کرلیا۔

امریکی خاتون نے ایس پی اور ایس ایچ او تھانہ سیکریٹریٹ کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ رحمان ملک کی طرف سے جان کو خطرہ لاحق ہے، رحمان ملک، یوسف رضا گیلانی اور پیپلز پارٹی کے دیگر لوگ ہراساں کررہے ہیں، قانونی کاروائی کے لیے مقدمہ اندراج کی درخواست دی لیکن پولیس نے مقدمہ درج نہیں کیا،استدعا ہےکہ عدالت رحمن ملک کے خلاف اندراج مقدمہ کاحکم دے۔ اس درخواست پر عدالت نے پولیس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 27 جون تک جواب طلب کرلیا۔

واضح رہے قبل ازیں سنتھیارچی نے تھانہ سیکریٹریٹ میں رحمان ملک کے خلاف درخواست دی تھی جس پر پولیس نے مقدمہ درج کرنے سے انکار کردیا تھا۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ رحمان ملک اپنا اثر و رسوخ استعمال کرتے ہوئے مجھے دھمکا رہے ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ رحمان ملک نے 2011ئ میں مجھے اپنا ڈرائیور اور گاڑی بھیج کر منسٹر انکلیو اپنی رہائش گاہ پر بلایا، رحمان ملک نے مجھے ایک شربت پینے کو دیا جسے پینے کے کچھ دیر بعد مجھ پر غنودگی چھانے لگی اس دوران رحمان ملک نے مجھے زیادتی کا نشانہ بنایا اور 2000 یورو بھی دیے جب کہ میں نے یہ واقعہ پاکستان میں موجود ایمبیسی اور واشنگٹن میں بھی رپورٹ کیا تھا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -