معروف شاعر منور رانا کا یومِ پیدائش(26نومبر)

معروف شاعر منور رانا کا یومِ پیدائش(26نومبر)
معروف شاعر منور رانا کا یومِ پیدائش(26نومبر)

  

منوررانا:

ان کامکمل نام سید منور علی ہے۔ وہ 26نومبر1952ءکو رائے بریلی میں پید اہوئے۔   اردو ادب کی دنیا میں ایک معتبر اور مقبول نام ہے۔ اردو اور ہندی میں اپنا الگ مقام رکھتے ہیں۔ انہوں نے اپنے کلام میں روائتی ہندی اور اودھی زبان کو بخوبی استعمال کیا ہے اور شوخی سے زیادہ حقیقت پسندی کا عنصر پایا جاتا ہے۔ آج کل لکھنو میں مقیم ہیں۔ 

نمونۂ کلام

ہنستے ہوئے ماں باپ کی گالی نہیں کھاتے 

بچے ہیں تو کیوں شوق سے مٹی نہیں کھاتے 

تم سے نہیں ملنے کا ارادہ تو ہے لیکن 

تم سے نہ ملیں گے یہ قسم بھی نہیں کھاتے 

سو جاتے ہیں فٹ پاتھ پہ اخبار بچھا کر 

مزدور کبھی نیند کی گولی نہیں کھاتے 

بچے بھی غریبی کو سمجھنے لگے شاید 

اب جاگ بھی جاتے ہیں تو سحری نہیں کھاتے 

دعوت تو بڑی چیز ہے ہم جیسے قلندر 

ہر ایک کے پیسوں کی دوا بھی نہیں کھاتے 

اللہ غریبوں کا مددگار ہے راناؔ 

ہم لوگوں کے بچے کبھی سردی نہیں کھاتے 

شاعر: منور رانا

 Ghazal

Hanstay   Huay   Maan   Baap   Ki   Gaali   Nahen   Khaatay

Bachay   Hen   To   Kiun   Shoq   Say   Matti   Nahen   Khaatay

 Tum   Say   Nahen   Milnay   Ka   Iraada   To   Hay   Lekin

Tum   Say   Na   Milen   Gay   Yeh   Qasam   Bhi   Nahen   Khaatay

 So   Jaatay   Hen    Fut  Paath   Pe   Akhbaar   Bichha   Kar

Mazdoor   Kabhi   Neend   Ki   Goli   Nahen   Khaatay

 Bachay   Bhi   Ghareebi   Ko   Samajhnay   Lagay   Shaayad

Ab   Jaag   Bhi   Jaatay   Hen   To   Sahri   Nahen   Khaatay

 Daawat    To   Barri   Cheez   Hay   Ham   Jaisay   Qalandar

Har   Aik   K   Paison   Ki   Dawaa   Bhi   Nahen   Khaatay

 Allah    Ghareebon   Ka   Madadgaar   Hay   RANA

Ham   Logon   K   Bachay   Kabhi   Sardi   Nahen   Khaatay

 Poet: Munawar   Rana

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -غمگین شاعری -