ہنگامہ آرائی کیس ، سیشن عدالت کے بعد انسداد دہشتگردی عدالت نے کیپٹن صفدر کی ضمانت کی درخواست پر تہلکہ خیز فیصلہ سنا دیا 

ہنگامہ آرائی کیس ، سیشن عدالت کے بعد انسداد دہشتگردی عدالت نے کیپٹن صفدر کی ...
ہنگامہ آرائی کیس ، سیشن عدالت کے بعد انسداد دہشتگردی عدالت نے کیپٹن صفدر کی ضمانت کی درخواست پر تہلکہ خیز فیصلہ سنا دیا 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )انسداد دہشتگردی کی عدالت نے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی نیب دفتر کے باہر ہنگامہ آرائی کیس میں عبوری ضمانت منظور کر لی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کی سیشن عدالت میں درخواست ضمانت مسترد ہونے کے بعد کیپٹن صفدر عبوری ضمانت کیلئے انسدا دہشتگردی کی عدالت پہنچے جہاں انہوں نے درخواست دائر کی ۔ عدالت نے مریم نوازشریف کی پیشی کے موقع پر نیب دفتر کے باہر ہنگامہ آرائی کیس میں کیپٹن صفدرکی 11 ستمبر تک عبوری ضمانت منظور کر لی ہے اور انہیں گرفتار کرنے سے روک دیاہے ۔

یاد رہے کہ اس سے قبل سیشن عدلات میں نیب لاہور کے دفتر کے باہر ہنگامہ آرائی کیس کی سماعت ہوئی جس دوران عدالت کی جانب سے کیپٹن صفدر ریٹائرڈ کی ضمانت خارج کر دی گئی ہے جبکہ اس کے علاوہ 16 ن لیگی رہنماﺅں کی بھی ضمانتیں خارج کردی گئیں ہیں ۔ ایڈیشنل سیشن جج کا حکمنامے میں کہناتھا کہ انسداد دہشتگردی کی دفعات کے بعد سیشن عدالت کا دائر اختیار نہیں ہے ۔

یاد رہے کہ مریم نوازشریف پیشی کیلئے نیب لاہور کے دفتر قافلے کے ہمراہ پہنچیں تھیں جبکہ نیب کے دفتر کے باہر بھی ن لیگی کارکنان کی ایک بڑی تعداد موجود تھی ۔ مریم نوازشریف کو دفتر کے اندر داخل کرنے کیلئے یبریئر ز ہٹائے گئے تو ساتھ ن لیگی کارکنان کی بڑ ی تعداد نے بھی اندر جانے کی کوشش کی اور پولیس نے جب انہیں روکنے کیلئے اقدامات کیے تو حالات کشیدہ ہو گئے اور صورتحال تصادم کی شکل اختیار کر گئی ۔

حالات خراب ہونے کے بعد نیب کی جانب سے مریم نوازشریف کو واپس جانے کا کہہ دیا گیا تاہم ا س دوران ن لیگی اراکین اور پولیس کے درمیان تصادم پتھراﺅ کی شکل اختیار کر گیا ۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -