آنکھ کھلی ہے دِل دھڑکا ہے | بیدل حیدری |

آنکھ کھلی ہے دِل دھڑکا ہے | بیدل حیدری |
آنکھ کھلی ہے دِل دھڑکا ہے | بیدل حیدری |

  

آنکھ کھلی ہے دِل دھڑکا ہے

ننگے پیروں کون آیا ہے

تیری آنکھیں ہی ایسی ہیں

یا ان آنکھوں میں کجلا ہے

شاہ بلوط ان کُہساروں میں

کس کا رستہ دیکھ رہا ہے؟

اتنی جلدی کیوں جاتے ہو

آخر اتنی جلدی کیا ہے؟

جو لفظوں کے جادوگر ہیں

ان کا جادو چل جاتا ہے

جب دل چاہے سو لیتے ہیں

آنکھ اور بخت میں سمجھوتہ ہے

فاقے نام کا ایک مسافر

رات مرا مہمان رہا ہے

آج تو ہچکی یوں آئی ہے

جیسے اسی نے یاد کیا ہے

آج تو بیدلؔ اس نے سچ مچ

دل دروازہ کھول دیا ہے

شاعر:  بیدل حیدری

(شعری مجموعہ:پشت پہ گھر  )

Aankh    Khuli   Hay   Dil   Dharrka   Hay

Nangay   Pairon   Kon   Aaya   Hay

Teri   Aankhen   Hi   Aisi   Hen

Ya   In   Aankhon   Men    Kajla   Hay

Shaah   Baloot   In    Kohsaaron   Men

Kiss   Ka   Rasta  Dekh   Raha   Hay

Itni   Jaldi   Kiun    Jaatay   Ho

Aakhir   Itni    Jaldi   Kaya   Hay

Jo   Lafzon   K   Jaadugar   Hen 

Un   Ka   Jaadu   Chall   Jaata   Hay 

Jab   Dil   Chaahay  So   Letay   Hen

Aankh   Aor   Bakht   Men   Samjhota   Hay

Faaqay   Naam   Ka   Aik   Musaafir

Raat   Mira   Mehmaan   Raha   Hay

Aaj   To   Hichki   Yun   Aai   Hay

Jaisay   Usi   Nay   Yaad   Kiya   Hay

Aaj  To   BEDIL  Uss   Nay    Sach   Much

Dil   Darwaaza   Khol   Diya   Hay

Poet: Bedil   Haidri

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -