تم نہیں سمجھو گے، چاند کا دکھ

تم نہیں سمجھو گے، چاند کا دکھ
تم نہیں سمجھو گے، چاند کا دکھ

  

تم نہیں سمجھو گے!!

چاند کا دکھ

کہ جب وہ گھٹنے لگتاہے

تو کیسے ماند پڑ جاتا ھے!! 

تم نہیں سمجھو گے!!

ادھورے خواب کا دکھ

کہ جب عین تکمیل پہ آنکھ کھل جائے!! 

خیر۔۔۔تم کیا سمجھو گے!!

ان باتوں کو تم نے نہیں جھیلا ناں

ادھوری ذات کا دکھ__!!!!

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -