تازہ ترین

ای پیپر

نسیم شاہد

نسیم شاہد

نسیم شاہد

چیئرمین نیب کے دعوے اور عزائم: ست بسم اللہ

جس طرح دودھ کا جلا چھاچھ بھی پھونک پھونک کر پیتا ہے، اِسی طرح پاکستان میں اگر کوئی اچھے دعوے کرے تو اُن پر شک ہونے لگتا ہے۔اصل میں نیچے سے اوپر تک ہمارے ہاں وعدے اور دعوے کرنے والے تو بہت ملیں گے، لیکن عمل کرنے والے خال خال ہی نظر آئیں گے۔ جس مُلک کی ستر سالہ تاریخ میں عوام نے ...

تفصیل پڑھیں

ملتان پولیس سب پر بازی لے گئی

آئی بی کے سابق ڈائریکٹر جنرل جاوید نور مرحوم جب ایس ایس پی ملتان تعینات تھے تو انہوں نے پولیس والوں کی اخلاقیات بہتر بنانے کے لئے مختلف طبقۂ فکر کے افراد سے پولیس کو لیکچر دلوانے کا سلسلہ شروع کیا۔ ایک روز انہوں نے مجھے بھی کہا۔ رضا ہال ملتان میں پولیس والوں کو بلایا گیا، اُن ...

تفصیل پڑھیں

نواز شریف کا نظریہ؟

وہی ہوا جس کی توقع تھی۔ سارے مشورے، ساری تجاویز اور ساتھیوں کی تمام درخواستیں رائیگاں گئیں، نواز شریف نے اپنا بیانیہ تبدیل نہیں کیا، بلکہ ایبٹ آباد کے جلسے میں کچھ زیادہ ہی تندوتیز باتیں کرگئے۔ جیل جانے اور موت سے نہ ڈرنے کی باتیں نواز شریف کی اپنی تاریخ کے تناظر سے کچھ لگا ...

تفصیل پڑھیں

مستقبل کی سیاست اور جنوبی پنجاب

15دسمبر کو ملتان میں بلاول بھٹو زرداری کے جلسے کی کامیابی پیپلزپارٹی کے لئے ایک بہت بڑا چیلنج ہے۔ جلسہ پہلے بھی اعلان کے باوجود ملتوی ہو چکا ہے اور اس کی واحد وجہ جلسے کی ناکامی کا خوف تھا۔ پیپلزپارٹی آئندہ انتخابات میں جنوبی پنجاب سے خاطر خواہ نشستیں حاصل کرنے کی امید لگائے ...

تفصیل پڑھیں

پارلیمنٹ کی بالادستی ، مگر کیسے؟

آج کا بنیادی سوال یہ ہے کہ پاکستان میں انتخابات ہوتے ہیں، حکومتیں بنتی ہیں، اُن کی مدت پوری ہو جاتی ہے، مگر کوئی تبدیلی نہیں آتی، جیسے حالات پہلے ہوتے ہیں، ویسے ہی برقراررہتے ہیں، تاوقتیکہ اگلے انتخابات آجاتے ہیں۔ یہ جمہوریت کی دوسری مدّت ہے، جو پوری ہونے جارہی ہے۔ کوئی ...

تفصیل پڑھیں

وہ پنجابی نہیں، پاکستانی تھے!

مجھے اس قسم کی رپورٹنگ اور اخباری سرخیوں پر سخت اعتراض ہے، جو بعض اخبارات نے کل اپنے صفحہ اول پر جمائیں۔یہ کیا سرخی ہے کہ کوئٹہ میں پندرہ پنجابی قتل،کیا یہ دشمن کا ایجنڈا نہیں، جسے ہم پورا کر رہے ہیں؟ وہ سب پاکستانی تھے اور پاکستانی ہی پورے مُلک میں دہشت گردوں کا نشانہ بنتے ...

تفصیل پڑھیں

تکبرّ: پاکستانی سیاست کی سب سے بڑی برائی!

تکبر کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ اصل میں ایک ایسا دیمک ہے جو انسان کو اندر ہی اندر سے کھوکھلا کر دیتا ہے۔ اب اگر میں یہ کہوں کہ پاکستانی سیاست کو بھی تکبرّ کی دیمک لگی ہوئی ہے، تو شاید فوری طور پر اسے تسلیم نہ کیا جائے، مگر ذرا ٹھنڈے دل سے غور کریں تو صاف نظر آتا ہے کہ پاکستانی ...

تفصیل پڑھیں

سیاسی بحران کے منڈلاتے سائے؟

پورا سیاسی منظر ہی افواہوں کی زد میں ہے۔ کہیں قبل از وقت انتخابات ہونے کی افواہ ہے تو کہیں یہ افواہ ہے کہ انتخابات تو وقت مقررہ پر بھی نہیں ہونے۔ایک معلق سی حکومت ہے اور معلق سے معاملات ہیں حکمران جماعت بضد ہے کہ انتخابات مدت پوری ہونے پر ہی ہوں گے ، مگر اس کے لئے ایک اچھی ...

تفصیل پڑھیں

کراچی: ہیں کواکب کچھ نظر آتے ہیں کچھ

آج کل اسٹیبلشمنٹ کا ذکر پھر زوروں پر ہے۔ کئی عام پاکستانی تو اسے ایک ایسی خاتون سمجھتے ہیں جو چھلا وے کی طرح کبھی اِدھر اور کبھی اُدھر اٹھکیلیاں کرتی دکھائی دیتی ہے۔ شیدا ریڑھی والا اکثر اس کے بارے میں سوال پوچھتا ہے، مگر مَیں اسے جب سمجھا نہیں پاتا تو اسے اسی تندور والی کی ...

تفصیل پڑھیں

مقدس گائے یا آسیب!

جسٹس عظمت سعید شیخ کا یہ جملہ بہت دل خوش کن ہے کہ کوئی بھی جج مقدس گائے نہیں، کرپشن پر سب کا احتساب ہونا چاہیے۔ ابھی کچھ دیر پہلے میری ملاقات لاہور ہائی کورٹ کے ایک ایسے سابق ایڈہاک جج سے ہوئی، جنہیں ایک سال کے آزمائشی عرصے کے بعد کنفرم نہ کیا گیا، انہوں نے بتایا کہ میرے سارے ...

تفصیل پڑھیں

نواز شریف کا اضطراب!

نواز شریف کا مضطرب ہونا تو بنتا ہے، جس ملک پر وہ تین بار حکمرانی کرچکے ہوں، اُس میں اُن کی کہیں بھی شنوائی نہیں ہورہی۔ ماضی میں تو مشکلات آنے پر کئی راہیں کھلتی رہیں،اب بظاہر سب راہیں مسدود ہوچکی ہیں۔ ایسے میں اگر نواز شریف ذہنی دباؤ اور مایوسی کا شکار ہیں تو یہ کوئی انہونی بات ...

تفصیل پڑھیں

کراچی میں سیاست کے بدلتے رنگ

پاکستانی سیاست میں کھیل تماشے تو ہوتے ہی رہتے ہیں، اس لئے ہمارے سیاستدانوں نے یہ کلیہ بھی ایجاد کررکھا ہے کہ سیاست میں سب کچھ ممکن ہے۔ گویا ناممکن کو ممکن بنانے میں بھی پاکستانی سیاست کو یدطولیٰ حاصل ہے، اس لئے کراچی میں جو کچھ ہوا ہے، اس پر دانتوں میں انگلیاں دبانے کی ضرورت ...

تفصیل پڑھیں

اُلٹی گنگا کو سیدھا کون کرے ؟

جسٹس (ر) جاوید اقبال کے چیئرمین نیب بننے سے نیب میں بھی جان پڑتی محسوس ہورہی ہے، اُدھر چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار بھی عدلیہ کو انصاف کے لئے سرگرم عمل دیکھنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے بار کے نمائندوں سے ملاقات کے موقع پر کہا کہ بار اور بنچ عدالتی نظام کی شہ رگ ہیں، لیکن ان دونوں کا ...

تفصیل پڑھیں

کیا ملک ڈیڈ لاک کی طرف بڑھ رہا ہے؟

جس طرح آج کل سموگ نے ملک کی فضاؤ ں کو لپیٹ میں لے رکھا ہے اور ہر چیز دھندلا کر رہ گئی ہے، اسی طرح سیاست کا منظر بھی دھند میں ڈوباہوا ہے۔ کسی کو کچھ پتہ نہیں کہ مستقبل قریب میں کیا ہونے والا ہے اور کس کی سیاست چمکے گی اور کس کی سیاست کا سورج غروب ہو جائے گا؟ اپوزیشن لیڈر سید خورشید ...

تفصیل پڑھیں

کراچی میں سیاسی کھچڑی ۔۔۔۔۔۔!

پورے ملک میں تو خیر سے سیاسی کھچڑی پک ہی رہی ہے، مگر جو کھچڑی کراچی میں پک رہی ہے، اُس کے تو رنگ ڈھنگ ہی نرالے ہیں۔ ایک سے بڑھ کر ایک شیف (باورچی) یہ کھچڑی پکانے میں اپنی مہارت دکھا رہا ہے اور ساتھ ہی یہ اصرار بھی کر رہا ہے کہ اس کی کھچڑی ہی اصل اور لذیذ ہے، یہ ہمارا مسئلہ اس لئے ہے ...

تفصیل پڑھیں

ٹرین گزر نہ جائے!

اسٹیشن پر بیٹھے ہوئے جب ہر مسافر کو پتہ ہو کہ ٹرین آنے والی ہے تو کون چین کی نیند سو سکتا ہے۔ اس صورت میں تو سب بوریا بستر باندھے بیٹھے ہوتے ہیں، کچھ یہی حال آج کل پاکستان میں سیاست کا بھی ہے۔ احسن اقبال تو نجانے کس مقصد کے تحت کسی دھرنا تھری کی توقع کر رہے ہیں، حالانکہ اس وقت ملک ...

تفصیل پڑھیں

نواز شریف کی واپسی

نواز شریف پاکستان پہنچ گئے ہیں، ایک مرتبہ پھر یہ قیاس آرائیاں غلط ثابت ہوئیں کہ وہ اب طویل عرصے تک وطن واپس نہیں آئیں گے۔ وہ آج احتساب عدالت میں بھی پیش ہوں گے اور عدالت نے روزانہ سماعت کا فیصلہ کیا تو شاید انہیں ہر روز عدالت آنا پڑے واپس آتے ہی انہوں نے پھر تنقید کے وہی نشتر ...

تفصیل پڑھیں

مسلم لیگ(ن) اور سیاسی مدو جزر

پہلے تو وزیر خزانہ اسحاق ڈار ٹی وی پر آ کر یہ خوشخبری سنا دیتے تھے کہ اوگرا نے پٹرول و ڈیزل کی قیمتیں بڑھانے کی جو سمری بھیجی ہے، اُسے مسترد کر دیا گیا ہے اور قیمتیں برقرار رہیں گی،عوام کو دو چار روپے لیٹر تیل پر ریلیف مل جاتا تھا تو وہ خوشی سے پھولے نہیں سماتے تھے، اب وزیر خزانہ ...

تفصیل پڑھیں

دو عملی کی سیاست کا وقت گیا

بڑے نام والی سیاسی جماعتیں جس تیزی کے ساتھ اپنی مقبولیت کھو رہی ہیں، حیرت ہوتی ہے۔ مقبولیت نہ بڑھے یہ اور بات ہے، مگر جو عوامی حمایت حاصل تھی، وہ اگر ختم ہونے لگے تو سیاسی جماعتیں اس وقت قصہ پارینہ بن جاتی ہیں۔ میں جماعتِ اسلامی کو ایسی جماعت نہیں سمجھتا تھا جو ہزاروں ووٹوں سے ...

تفصیل پڑھیں

2018ء میں انتخابات: شکوک و شبہات کیوں؟

کیا واقعی ایسے کسی ایجنڈے پر کام ہو رہا ہے کہ 2018ء میں انتخابات نہ ہو سکیں؟ آخر شکوک و شبہات میں لپٹی آوازیں کیوں اُٹھ رہی ہیں،چیئرمین سینیٹ رضا ربانی کو کیوں لگ رہا ہے کہ 2018ء میں انتخابات نہیں ہوں گے، انہیں یہ کیوں کہنا پڑ رہا ہے کہ 2018ء میں انتخابات نہ ہوئے تو وفاق پر سیاہ بادل ...

تفصیل پڑھیں